میری صبح تیرے دم سے

0
162

میری صبح تیرے دم سے
میری شام تیرے سنگ ہے
تومیری حیات کا ثبوط
تو میرے دل کی سرگم ہے

جب توآئے سانس چلے
جب توجاۓ سب بےجان سا
تیرا ہونا میرا سکون
تیرے بن سب غم ہے

نہیں پرواہ دنیا کی
میری دنیا تجھ میں بسی
تیری زلفوں کی چھاؤں تلے
میری آس کا موسم ہے

تو چھو لے تو تھم جاؤں
کچھ بھی میں کر جاؤں
بس تیری چاہت میں
میری حرکت مبہم ہے

نین تجھے پا کر
سب پا لیا میں نے
نہیں کچھ بھی چاہوں اب
میرا حاصل توصنم ہے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here